Home O Herbal

پیر, 02 19th

Last updateجمعرات, 21 جنوری 2016 6pm

درد سر اور آدھ سیسی

طب نبوی ﷺ میں درد سر اور آدھ سیسی کا علاج

ابن ماجہ نے اپنی سنن میں اس سلسلے میں ایک ایسی حدیث بیان کی ہے جس کی صحت محل نظر ہے۔
”نبی کریم ﷺ کو جب کبھی درد سر ہوتا تو آپ اپنے سر پر مہندی کا لیپ کرتے مہندی کا پلاسٹر چڑھاتے اور فرماتے کہ یہ صداع کے لیے اللہ کے حکم سے نافع ہے“
صداع الم الراس ہے یہ تکلیف پورے سر میں یا جزءراس میں ہو سب جگہ صحیح ہے اس میں سے جو سر کے کسی ایک حصے میں ہوا اور ہر وقت موجود رہے، اسے شقیقہ کہتے ہیں اور جو پورے سر میں ہوا سے بیضہ یا خودہ کہتے ہیں جیسے خود جو سر کے سبھی حصے کو شامل ہوتی ہے کبھی سر کے اگلے کبھی سر کے پچھلے حصے میں بھی یہ بیماری پائی جاتی ہے۔
اس کی قسمیں بہت سی ہیں اور اسباب صداع بھی مختلف ہیں مگر صداع کی حقیقت سخونت راس یا اس کا گرم ہوجانا ہے اس لیے کہ بخارات اس میں گھومتے رہتے ہیں جو نکلنے کے لیے منافذ اور سوراخ کے خواہاں ہوتے ہیں۔ مگر منفعذ نہیں ملتا تو سر پہ دباﺅ ڈالتے ہیں جس کی وجہ سے درد سر پیدا ہوجاتا ہے، جیسے پیپ جب منفعذ نہیں پاتا تو درد پیدا کرتا ہے اور ہر تر چیز جب گرم ہوتی ہے تو وہ اپنے لیے اس مقام سے جس میں وہ اس وقت ہے زیادہ پھیلی جگہ تلاش کرتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ یہ بخارات جب سر پھیل جاتے ہیں ان کے تحلیل ہونے یا ختم ہونے کی کوئی صورت باقی نہیں رہتی تو سر میں گردش کرنے لگتے ہیں اس گردش بخارات کو سدر (اندھیری) کہتے ہیں۔
صداع مختلف اسباب کی بناءپر ہوتے ہیں۔
۱۔    اخلاط اربعہ یا طبائع اربعہ حار بارد رطب و یابس کے غلبہ کی بنیاد پر۔
۲۔     کسی زخم معدہ کی وجہ سے کہ معدہ کا اعصاب کے ذریعہ براہ راست دماغ سے تعلق ہے۔ قرحہ معدہ کی وجہ سے وہ عصبہ متورم ہو جاتا ہے یا خود معدہ کا مقام ماﺅف متورم ہوکر عصبہ کے تناﺅ کا سبب بنتا ہے اس طرح معدہ کی اذیت کا احساس سر کو ہوتا ہے اور درد سر پیدا ہوجاتا ہے۔
۳ ۔    ریاح غلیظہ جو معدہ میں پیدا ہوتی ہے اس کا صعود کھوپڑی کی جانب ہوتا ہے جس سے کھوپڑی میں تناﺅ کے بعد درد پیدا ہوتا ہے۔
۴۔    معدہ کے عروق میں ورم پیدا ہوتا ہے ان عروق میں ورم کی وجہ سے سر درد کا احساس ہوتا ہے۔
۵۔    کثرت غذا کی وجہ سے امتلاءمعدہ پیدا ہوجاتا ہے کچھ حصہ تو معدہ سے براز وغیرہ کی شکل میں نیچے آجاتا ہے کچھ خام حصہ باقی رہ جاتا ہے اس کی گرانی سے سر میں درد پیدا ہوجاتا ہے۔
۶۔    جسم کے کھوکھلا ہونے کی وجہ سے جماع کے بعد درد سر پیدا ہوجاتا ہے اس لیے کہ تخلخل کی وجہ سے ہوا کی گرمی سر میں مقدار سے زیادہ سپلائی ہوتی ہے۔
۷۔    صداع بعض وقت قے اور استفراغ کے بعد ہوتا ہے جس کا سبب یا تو خشکی ہوتی ہے یا معدہ سے بخارات سر کی طرف آنے لگتے ہیں۔
۸۔    بعض وقت درد سر گرم ہوا اور گرم موسم کی وجہ سے پیدا ہوتا ہے۔
۹۔    شدید ٹھنڈک کی وجہ سے اس لیے کہ ٹھنڈک سے بخارات کثیف ہوجاتے ہیں اور سر سے تحلیل نہیں ہوتے بلکہ جم جاتے ہیں۔
۰۱۔    غیر معمولی بیداری نیند کا فقدان۔
۱۱۔     سر کے اوپر غیر معمولی دباﺅ یا گراں چیزوں کے اٹھانے سے۔
۲۱۔    کثرت گفتار جس سے دماغ اس کی تکان محسوس کرتا ہے اور ضعف کی وجہ سے برداشت کی قوت کمتر ہوجاتی ہے درد سر کا سبب بن جاتا ہے۔
۳۱۔    غیر معمولی ریاضت و محنت شدید کثرت حرکت کی وجہ سے بھی درد سر پیدا ہوتا ہے۔
۴۱۔    اعراض نفسانیہ کی بناءپر جیسے غم، فکر رنج وساوس افکار روئیہ۔
۵۱۔    شدت بھوک سے اس لیے کہ اس وقت پیدا ہونے والے بخارات کا کوئی مصرف نہیں رہ جاتا تو وہ اور زیادہ ہوجاتے ہیں اور دماغ کی جانب چڑھتے ہیں جس سے درد سر پیدا ہوجاتا ہے۔
۶۱۔    دماغ کی جھلی میں ورم کی وجہ سے جس میں مریض کو دماغ پر ہتھوڑا چلنے اور سر پھٹنے کا احساس ہوتا ہے۔
۷۱۔    بخار کی وجہ سے صداع ہوتا ہے اس لیے کہ بخار میں حرارت اور شدید پیدا ہوتی ہے جو سر کی تکلیف کا باعث بن جاتی ہے۔

درد سر اور آدھ سیسی
BLOG COMMENTS POWERED BY DISQUS