دماغ دن بھر کی سوچ بچار کے نتیجے میں پیدا ہونے والے زہریلے مواد کو نیند کی مدد سے پاک صاف کرتا ہے۔ امریکی سائنس دانوں کی ٹیم کا خیال ہے کہ نیند کی بنیادی وجہ فالتو مواد کو ٹھکانے لگانے والا نظام ہے۔

نیویارک،      دماغ دن بھر کی سوچ بچار کے نتیجے میں پیدا ہونے والے زہریلے مواد کو نیند کی مدد سے پاک صاف کرتا ہے۔ امریکی سائنس دانوں کی ٹیم کا خیال ہے کہ نیند کی بنیادی وجہ فالتو مواد کو ٹھکانے لگانے والا نظام ہے۔ یہ تحقیق مشہور جریدے سائنس میں شائع ہوئی ہے۔ اس سے معلوم ہوا کہ نیند کے دوران دماغی خلیے سکڑ جاتے ہیں جس سے ان کے درمیان خلا زیادہ وسیع ہو جاتا ہے۔ اس کے باعث وہاں مائع کو بہنے کا موقع ملتا ہے جو دماغ کو پاک صاف کر دیتا ہے۔ بعض زہریلی پروٹینوں کو صاف کرنے میں ناکامی کی وجہ سے دماغی امراض پیدا ہوتے ہیں۔ اس سے پہلے یہ دریافت ہوا تھا کہ نیند یادداشت کو پکا کرنے اور سیکھنے کے عمل میں اہم کردار ادا کرتی ہے لیکن یونیورسٹی آف روچسٹر میڈیکل سنٹر کی ٹیم سمجھتی ہے کہ نیند کا ایک بنیادی سبب صفائی ستھرائی ہو سکتا ہے۔ دماغ کے خلیے نیند کے دوران سکڑ جاتے ہیں۔ اس سے خلیوں کے درمیان موجود خلا پھیل جاتا ہے جس سے دماغ کے اندر موجود مائع کو وہاں سرایت کرنے اور فاسد مواد کو بہا لے جانے کا موقع مل جاتا ہے۔