Home O Herbal

منگل, 02 20th

Last updateپیر, 21 اکتوبر 2013 6am

شہد کے بارے میں علمی موشگافیاں

يَخْرُجُ مِنْ بُطُونِهَا شَرَابٌ مُخْتَلِفٌ أَلْوانُهُ فِيهِ شِفَاءٌ لِلنَّاسِ [النحل: 69]
اس آیت کے مفہوم کے تعین میں اہل علم مختلف ہیں
”ان مکھیوں کے شکم سے ایک شراب (پینے کی چیز) جس کا رنگ مختلف ہو تا ہے نکلتی ہے جس میں شفاءہے لوگوں کے لیے“۔
وہ اختلاف یہ ہے کہ آیت کے لفظ ”فیہ“ میں ضمیر کا مرفع شراب ہے، یا قرآن ہے سچی بات تو ضمیر کا مرجع شراب معلوم ہوتا ہے، ابن مسعودؓ، ابن عباسؓ، حسن، قتادہ اور اکثر قرآن کے سمجھنے والوں کا یہی کہنا ہے اور سیاق کلام کا تقاضا بھی کچھ ایسا ہی ہے اور آیت میں قرآن کا ذکر نہیں ہے اور یہ صیحح حدیث تو اس بارے میں صراحت ہی ہے جس میں آپ نے شہد کے استعمال کے بعد صحابی کے شبہ کو سچ کہا اللہ نے فرما کر اس کو متعین کردیا کہ ضمیر کا مرجع ”فیہ“ میں شراب کی جانب ہے اور کوئی دوسری بات نہیں۔

BLOG COMMENTS POWERED BY DISQUS