اطریفل
اطریفل ایک قسم کی معجون ہے ۔جس میں تین پھل (ہڑ،بہڑہ،آملہ)بطور جزاعظم شامل ہوتے ہیں۔ انہیں بادام روغن یا گھی میں چرپ کرکے شہد کے اکھا نڈ کے قوام میں ملا جاتا ہے۔ اطریفل کو چینی یا شیشے کے مرتبان میں رکھنا چاہئیے۔ اور چالیس دن بعد میں استعمال کرنا چاہئے۔ اگر زیادہ استعمال کرنا ہو تو درمیان میں وقفہ کرنا چاہئیے۔

اطریفل اسطخودوس
دردسر۔ نزلہ، مرگی، مالیخولیا اور سودادی امراض میں مفید ہے۔ بالوں کی سیاہی کو قائم رکھتا ہے۔ دماغ کو فضلا ت سے صاف کرنے میں بے نظیر ہے۔ہو الشافی :پوست ہلیلہ زرد، ہلیلہ سیاہ، پوست ہیڑہ، آملہ، برگ سناءمکی، تربد سفید، بسفائج، اسطخودوس، مصطگی رومی، افتیمون، کشمش، مویز منقی ہر ایک ۲، ۲ تولہ علحیدہ علحیدہ باریک کر کے دس تولہ روغن بادام سے چرب کر کے دس تولہ روغن بادام سے چرپ کر کے ایک سیر شہد خالص کے قوام میں ملا کر اطریفل بنائیں۔
مقدار خوراک :۷ماشہ ایک تولہ تک عرق گاو ¿زبان یا پانی کے ساتھ۔

اطریفل زبانی
ہوالشافی: تربد سفید ،مجوف خراشیدہ (یعنی اوپر سے چھلا ہوا اور اندر سے لکڑی نکا لا ہوا) کشنیز خشک ہر ایک دس تولہ۔ پوست ہلیلہ زرد، آملہ، پوست ہلیلہ کابلہ، ہلیلہ سیاہ، سقمونیا ولا ئتی ہر ایک ۵ تولہ۔ گل بنفشہ ۵ تولہ۔ پوست بہڑہ، آملہ، طباشر، گل سرخ، گل نیلو فر ہر ایک ۲ تولہ۔ صندل سفید، کتہرا ہر ایک ۰۱ تولہ ۔روغن بادام شیرین ۰۱ تولہ ۔مر بہ ہڑڑکا شیرہ خشک دواو ¿ں سے ڈیڑھ گنا ۔اور شہد خالص دواو ¿ں کے برابر ۔کل سترہ دوائیں ہیں۔ عناب، سپستان ہر ایک سو عدد ۔گل بنفشہ ۵تولہ دواوئیں الگ ہیں ۔
ترکیب تیاری: آخری ۳دواو ¿ں کو ۲ سیر پانی میں جوش دیں۔ نصف رہنے پر چھان لیں۔ اور اس میں شیرہ ہر ڑاور شہد ملا کر قوام بنائیں اور باقی کو کوٹ چھان کر بادام روغن سے چرب کر کی ملائیں۔ بس اطریفل تیار ہو گیا۔ شیشے یا چینی کے مرتبان میں محفوظ رکھیں۔
مقدار خوراک: سات ماشہ سے نو ماشہ تک رات عرق گاو ¿زبان ے اپانی سے کھائیں۔ اگر ۲،۳ دست لانے مطلوب ہوں تو ایک سے ڈیڑھ تولہ تک استعمال کریں۔
فوائد:نزلہ زکام ااور امراض چشم وغیرہ میں رفع کے لے استعمال کیا جاتا ہے۔ درد سر، تخیر معدہ میں مفید ہے۔ متواتر کھانے سے دائمی نزلہ کو مفید ہے۔