٭  برگ عشق پیچیہ پیس کر بچہ کو پلانا اکسیر ہے۔
٭  مرچ، سیاہ، مغزجما لگوٹہ، ہر ایک چھ ماشہ۔ پا ن کے پتوں کے رس میں کھرل کر کے دانہ موٹھ کے برابر گولیاں بنا کر شیر مادر دسے ایک یا دو گولی کھلا ئیں۔ نہایت مفید ہے۔ نزلہ کو بھی شفا دیتاہے۔
٭  اونٹ کی مینگنی کو آگ میں جلاکر سرخ ہی آ گ کے دودھ میں بجھائیں۔ اس کو باریک کر کے حفاظت سے رکھیں۔ اس کی دو چاول نسوار زکام اور سردرد کے لے اکسیر ہے۔ جس بیمار کو یہ نسوار سے چھینک نہ آئے اس کا بچنا محال ہے۔
٭  چاول باسمتی یاسفید چاول لے کر اوپر شیر مدار (دودھ آگ) ڈ ال کر چھ مرتبہ تر خشک کرکے بعد میں سکھا کر پیس لیں۔ یہ نسوار بھی نزلہ کے لیے مفید ہے۔
 ٭  دانہ الائچی کلا ں۔ دار چینی، سونٹھ ہموزن۔ بادام روغن میں چرب کریں۔ ۳رتی سے ایک ماشہ تک دن میں تین ۴مرتبہ ہمراہ پانی یا عرق سونف وغیرہ سے دینے سے نزلہ زکام وغیرہ میں مفید ہے۔
٭  سہاگہ سفید بریا ں (کھیل کیا ہوا) باریک پیس کر کپڑا چھان کر لیں۔ اور اسی کو گیرو سے رنگ لیں۔ بس تیار ہے۔
خوراک: ایک دورتی سے چار رتی تک ہمراہ چائے یا گرم پانی دن میں دو دفعہ دیں۔ نزلہ زکام اورآوز بگڑنے کے لے مفید ہے۔
٭  سفوف جو زما ثل :پیش مدبر ۶ماشہ۔ گندھگ آملہ ،مرچ سیاہ ۶،۶ماشہ۔ جو زماثل مدبر یا سوختہ ۲تولہ۔ سونٹھ ۲تولہ۔ مگھاں ۲تولہ۔ پارہ گندھک میں خوب سحق کریں کہ مثل سرمہ ہوجائے۔ بعد تمام اشیاءباریک پیس کر ملا کر متواتر ۴گھنٹے زور دار ہاتھوں سے کھرل کر کے حفاظت سے رکھیں۔
مقدار خوراک: ایک رتی سے دو رتی تک ہمراہ پانی یا شہد تین دفعہ نزلہ زکام والے کو دے سکتے ہیں۔ نےز زیادتی پیشاب، امساک، درد اعصاب، وجع المفاصل کے لیے استعمال کر سکتے ہیں۔
اس کو شہد اور مصری کے ساتھ استعمال کرنے سے دل کی ہر قسم کی بیماریاں دورہوتی ہیں۔
٭   غشی: ہاتھ پا و ¿ں کو زور سے باندھ دیں۔ سرد پانی کے چھٹنے دیں۔ کباب چینی سونگھائیں۔لذیذ اور خوشبو دار غذا ئیں کھلائیں۔
٭   دل کی کمزوری: سچے سیب جلے ہوئے ۳ ماشہ۔ طبا شیر ۳ماشہ۔چاندی کے ورق ۳عدد۔ مصری ۔ باریک پیس کر بکری کے دودھ سے دیں۔
٭   درد دل: کلو وفارم سنگھائیں۔