رسول اللہﷺ اپنی تین انگلیوں سے کھانا تناول فرماتے تھے‘ اور یہی کھانے کے طریقوں میں سب سے نافع طریقہ ہے اس لئے کہ ایک یا دو انگلی سے کھانے والے کو لذت نہیں ملتی اور نہ خوشگوار معلوم ہوتا ہے‘اور نہ آسودگی ہی ہوتی ہے مگر جب اس طور پر دیر تک کھایا جائے اور غذا کا لقمہ بھرپور نہ ہونے کی وجہ سے قناة ہضم معدہ کو فرحت نہیں ہوتی بلکہ وقفہ وقفہ سے غذا معدہ میں پہنچتی ہے‘جیسے کوئی دانہ چن کر اٹھائے اور کھائے تو اس طرح کھانا نہ مزہ دیتا ہے‘اور نہ خوشگوار ہوتا ہے اور پانچوں انگلیوں اور ہتھیلی تک کھانے میں آلودہ کرلینے سے آلات ہضم ومعدہ پر غذا کا بار پڑتا ہے‘اور بعض اوقات کثرت غذا سے کھانا اٹک جاتا ہے اور موت ہوجاتی ہے اور بعض وقت آلات غذا کو اچھو لگنے کی وجہ سے غذا کو باہر کردیتے ہیں‘معدہ اس کی قوت برداشت نہیں رکھتا اور نہ کھانے میں لذت حاصل ہوتی ہے اور نہ فرحت ملتی ہے اس لئے آپ کے کھانے کا طریقہ سب سے زیادہ نافع ہے اور جو آپ کے کھانے کا طریقہ اختیار کرتے ہوئے تین انگلی سے کھائے وہ بھی اس نفع سے متمتع ہوسکتا ہے۔