Home O Herbal

پیر, 02 19th

Last updateجمعرات, 21 جنوری 2016 6pm

طب نبوی علاج نبوی ﷺ کے انداز و طریق

طب نبوی

علاج نبوی ﷺ کے انداز و طریق

آپ ﷺ کا طریقہ علاج امراض میں تین انداز پر مشتمل ہوتا ہے۔
پہلا طریقہ:     علاج بالادویہ         طبعی دواﺅں کے ذریعہ مرض کا دور کرنا۔
دوسرا طریقہ:     علاج بالادعیہ         دعا، جھاڑ پھونک کے ذریعہ مرض دور کرنا۔
تیسرا طریقہ:     علاج بالا مرین        دونوں چیزوں سے مرکب طریقہ سے مرض دور کرنا۔
رسول اللہ ﷺ کے علاج کے ان تینوں طریقوں کا ہم ذیل میں ذکر کریں گے۔ سب سے پہلے ان طبعی دواﺅں کا ذکر کریں گے جو آپ نے دوسروں کے لیے تجویز فرمائیں اور اس کا استعمال خود کیا یا دوسرں سے کرایا‘ پھر ادویہ الٰہیہ کو جو دعا جھاڑ پھونک پر مشتمل ہے‘ اس کا ذکر کریں گے‘ پھر ان دواﺅں کا ذکر کریں گے جو دوا اور دعاءدونوں ہی سے مرکب ہیں۔
اس کا ہم مختصر بیان اشارة ً کریں گے‘ اس لیے کہ ہمارے پیغمبر جناب محمد ﷺ دنیا میں ہادی بناکر اور لوگوں کو بھلائی کی طرف پکارنے والا بنا کر جنت کی راہ بتانے والا‘ اللہ کی پہچان کرانے والا اور امت کو اللہ کی رضا کے مقامات بتلانے والا اور اس کے احکام کی پابند ی کا حکم کرنے والا‘ غصہ اور خفگی کے مقامات کی وضاحت کرنےوالا اور ان سے روکنے والا بنا کر بھیجے گئے‘ انہوں نے اپنی امت کو انبیاءسابقین و مرسلین کی خبر دی اور ان کے حالات و معاملات جو ان کو ان کی امت کے ساتھ پیش آئے بیان کیا، دنیا کی تخلیق سے متعلق باتیں اور زندگی شروع ہونے اور زندگی کے بعد پوری زندگی کے کارناموں کی رپورٹ پیش ہونے کا دن اور انسان کے بدبخت ہونے اور خوش بخت ہونے کی کیفیات اور اس کے اسباب کا واضح بیان لوگوں کے سامنے پیش کیا۔
بدن انسانی کی صحت و علاج کا مسئلہ شریعت کے ہر جہت اور ہر طریقے سے مکمل ہونے سے تعلق رکھتا ہے‘ خود یہ مسئلہ مقصود دلغیرہ ہے‘ اس لیے کہ علاج جسم انسانی تو ضرورت کے وقت کیا جاتا ہے اگر اس کی ضرورت نہ ہو تو انسان اپنی ساری توانائی اور ساری دانائی قلوب اور روحوں کی درستگی پر صرف کرے اس کی توانائی و تندرستی کی طرف لگ جائے اور جن بیماریوں سے دل اور روح متاثر ہوں ان کو دور کرنے کی کوشش کرے اور ایسی احتیاطی تدابیر جن سے یہ فساد جسمانی اور روحانی پیدا ہی نہ ہو مقصود اولین ہے‘ انسان کے بدن کی درستگی بلا اصلاح قلب کچھ زیادہ مفید نہیں بدن کی خرابی اور صحت کی پائیداری ایسی صورت میں کہ دل توانا و تندرست ہو کسی قدر کم ضرر دیتا ہے یہ نقصان آنی جانی چیز ہے‘ جس کی پشت پہ دوا اور مکمل منفعت ہے۔

طب نبوی علاج نبوی ﷺ کے انداز و طریق
BLOG COMMENTS POWERED BY DISQUS