Home O Herbal

منگل, 02 20th

Last updateپیر, 21 اکتوبر 2013 6am

طب نبوی

نظربد سے متعلق ایک واقعہ

وہ جھاڑ پھونک جس سے نظربد دور ہوجائے یہ ہے کہ ابو عبداللہ الساجی سے بیان کیا جاتا ہے کہ وہ اپنے کسی حج یا غزوہ کے سفر میں ایک خوبصورت دلکش اونٹنی پر سوار تھے‘اور ان کی معیت میں ایک بد نگاہ شخص تھا جب بھی وہ کسی چیز پر نگاہ ڈالتا تو وہ برباد ہوجاتی لوگوں نے ابو عبداللہ سے کہا کہ اپنی اونٹنی کو اس بدنگاہ شخص سے بچاﺅ تو انہوں نے کہا کہ بھائی اس بد نگاہ کو میری اونٹنی سے کیا لینا دینا‘اس بد نگاہ شخص کو جب اس کی اطلاع ہوئی تو وہ ابو عبداللہ کی غیرموجودگی کا انتظار کرتا رہا‘ چنانچہ موقع پاکر وہ ان کے کجادہ کے پاس آیا اور اونٹنی پر اپنی بدنظر ڈالی ہی تھی کہ اونٹنی گرپڑی اور تڑپنے لگی‘اتنے میں ابو عبداللہ آگئے تو ان کو اطلاع دی گئی کہ بدنگاہ نے اس پر نظر بد ڈالی ہے اور انہوں نے بچشم خود اسے دیکھا تو فرمایا کہ مجھے اس بدنگاہ شخص کو دکھادو جب اسے دکھایا گیا آپنے وہاں کھڑے ہوکر یہ دعا پڑھنی شروع کی۔
”اللہ کے نام سے وہ روکنے والا روک ہے خشک پتھر اور جلتا ہوا شہاب ہے میں بدنگاہ کی نظربد کو اس پر اور اس کے نزدیک لوگوں میں سب سے محبوب ترین چیز کی طرف پھیردیا (ذرا ) اپنی نظر لوٹاﺅ اور دیکھو کیا تمہیں کچھ فتور نظر آتا ہے پھر نظر بار بار لوٹاﺅ نظر تمہاری طرف تھکی ماندہ واپس آئے گی“۔
اس دعا کے پڑھنے کا یہ اثر ہوا کہ بد نگاہ کی آنکھ کے دونوں پپوٹے باہر نکل پڑے اور اونٹنی بھلی چنگی ہوکر کھڑی ہوگئی۔

BLOG COMMENTS POWERED BY DISQUS