Home O Herbal

منگل, 02 20th

Last updateپیر, 21 اکتوبر 2013 6am

طب نبوی

جھاڑ پھونک کے ذریعہ درد کے علاج کے متعلق ہدایات نبوی ﷺ

امام مسلم ؓنے صحیح مسلم میں عثمان بن ابی العاص سے روایت کی ہے کہ:
”انہوں نے رسول اللہﷺ سے درد کی شکایت کی جو ان کے بدن میں اسلام لانے کے بعد سے پیدا ہوگیا تھا‘رسول اللہﷺ نے ان سے فرمایا کہ اپنا ہاتھ بدن کے اس حصہ پر رکھو جہاں تکلیف ہے پھر تین مرتبہ بسم اللہ کہو اور سات مرتبہ ((اعوذ بعزة اللہ الخ)) کے ذریعہ تعوذ کرے کہ میں اللہ تعالیٰ کی عزت وقدرت کے طفیل اس شر سے پناہ چاہتا ہوں‘ جو میں اپنے بدن میں پارہا ہوں اور جس سے میں خطرہ محسوس کرتا ہوں“۔
اس تعوذ میں علاج ذکر الٰہی کے ساتھ ہے اور شفاء کا معاملہ اللہ تعالیٰ کے سپرد کرنے کی بنیاد پر ہے اور اللہ کی عزت وقدرت کے طفیل اس شر سے استعاذہ ہے جو اس کو ختم کردیتا ہے اور اس کا تکرار اور زیادہ نافع اور مفید ہے جیسے کہ مرض کے اخراج کے لئے دوا بار بار دی جاتی ہے اور سات میں ایسی خصوصیت ہے جو کسی دوسرے عدد میں نہیں پائی جاتی۔
صحیحین میں روایت ہے کہ:
”نبیﷺ اپنے گھر کے کسی شخص کے لئے تعوذ فرماتے‘تو اپنا دایاں ہاتھ اس کے بدن پر پھیرتے ہوئے یہ دعا پڑھتے کہ اے اللہ اے لوگوں کے رب تو اس تکلیف کو دور کر اور شفاءعطا فرما تو ہی شفا عطا کرنے والا ہے تمہاری شفاءکے سوا کوئی شفاءنہیں یہ ایسی شفاءہے جو کسی بیماری کو باقی نہیں رہنے دیتی“
اس رقیہ میں کمال درجہ ربوبیت کے ذریعہ اللہ سے توسل کیا گیا ہے‘ اور اس کی کمال رحمت کے طفیل شفاءکی درخواست کی گئی ہے اور اس کا اقرار ہے کہ صرف وہی تن تنہا شفاءدینے والا ہے اس شفاء میں کوئی دوسرا شافی شریک نہیں اسی طرح یہ رقیہ اللہ تعالیٰ کی توحید‘اس کی ربوبیت اور اس کے احسان تینوں پر مشتمل ہے۔

BLOG COMMENTS POWERED BY DISQUS